ذہنی بیماریاں

میرے خیال سے نیند نہ آنے کی سب سے عام وجہ سب سے آسان ہے، جو کہ تنہائی ہے۔
ہیتھ لیجر ، اداکار-


تعارف:

کیا آپ کو وہ رات یاد ہے جب کہ سونا بہت مشکل ہورہا تھا اور آپکو کیسا محسوس ہورہا تھا؟ کیا نیند آنے کے باوجود آپ سو نہیں پاتے؟ جہاں کچھ لوگوں کے لیئے یہ ایک کبھی کبھار ہونے والا واقعہ ہے تو وہیں کچھ لوگوں کے لیئے یہ ایک سنجیدہ مسئلہ ہے جو کہ انکی روزمرہ زندگی کو بُری طرح متاثر کرتا ہے۔ نیند نہ آنا (Insomnia ) ایک ایسی کیفیت ہے جس میں نیند آنے یا سوتے رہنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے یا پھر نیند کا معیار بہت خراب ہوتا ہے۔

نشانیاں اور علامات:

ایک بالغ انسان کو دن میں اوسطاً ۷ سے ۸ گھنٹوں کی نیند کی ضرورت ہوتی ہے۔ اگر کسی کو سونے میں مشکلات کا سامنا ہو یا مندرجہ ذیل علامات میں سے کوئی بھی علامت محسوس ہو تو اسے اس بیماری سے آگاہ ہونے اور مدد حاصل کرنے کی ضرورت ہے۔
۔ سونے میں دشواری
۔ رات کو بار بار جاگنا
۔ خواہش نہ ہوتے ہوئے بھی جلدی اٹھ جانا
۔ پورا دن سستی اور تھکاوٹ محسوس کرنا
۔ کسی چیز پر دھیان دینے میں ناکامی
۔ نیند کی کمی کی وجہ سے مسلسل سر درد
۔ دوسروں کے ساتھ مصروف رہنے میں پریشانی کا سامنا کرنا
۔ پیٹ کے مسائل
۔ نیند کے بارے میں فکرمند ہونا

سونے - جاگنے کی بیماری (Sleep-Wake Disorder) کی اقسام:

۱) نیند نہ آنے کی بیماری ( Insomnia Disorder):

اس کیفیت میں نیند کی مقدار اور اسکے معیار کے بارے میں شکایات رہتی ہیں جس میں سونے میں دشواری، جاگتے رہنا اور سونے کے بعد اُٹھ جانا جس میں دوبارہ سونے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑے جیسی کیفیات شامل ہیں۔ نیند کی کمی تھکاوٹ کی وجہ بنتی ہے جو کہ مسلسل تین مہینے تک جاری رہتی ہے جس میں ہر ایک دورانیہ ایک ہفتے میں تین دن سے زائد پر مشتمل ہوتا ہے۔

۲) ہائپرسومنولنس ڈس آرڈر (Hypersomnolence Disorder):

اس کیفیت میں سات گھنٹے سے زائد کی نیند کے بعد بھی انسان تھکا ہو اور سستی محسوس کرتا ہے۔ ایک مکمل نیند کے بعد بھی انسان دن کے اوقات میں خود کو توانا اور تروتازہ محسوس نہیں کرپاتا۔ ضرورت سے زیادہ نیند لینے کی خواہش مسلسل تین مہینے تک جاری رہتی ہے جس میں ہر ایک دورانیہ ایک ہفتے میں تین دن سے زائد پر مشتمل ہوتا ہے۔

۳) نارکولپسی (Narcolepsy):

اس کیفیت کا شکار انسان دن کے مختلف اوقات میں اچانک سوجاتا ہے۔ یہ کیفیت مختلف حالات میں نقصان دہ ثابت ہوسکتی ہے جیسا کہ گاڑی چلاتے ہوئے۔ اس بیماری کی تشخیص اس وقت ممکن ہے جب کہ ایک شخص مسلسل تین مہینوں تک ہر مہینے میں کئی بار اس کیفیت کا سامنا کرتا رہے۔

۴) سانس کی وجہ سے نیند میں خلل پیدا ہونا (Breathing-related Sleep Disorders):

یہ ایک جامع لفظ ہے جس میں چار طرح کی بیماریاں شامل ہیں:
۔ اوبسٹرکٹو سلیپ اپنیا ہائپو پنیا (Obstructive sleep apnea hypopnea): رات کے اوقات میں سانس لینے میں دشواری کی وجہ سے دن میں نیند محسوس کرنا
۔ سینٹرل سلیپ اپنیا (Central sleep apnea): نیند کے دوران سانس رک جاناجس کے دوران دماغ پٹھوں تک پیغام نہیں پہنچا پاتا۔ سانس کا عمل رکتا اور پھر جاری رہتا ہے۔
۔ سلیپ ریلیٹڈ ہائپووینٹیلیشن (Sleep-related hypoventilation): اس کیفیت میں سانس لینے کا عمل کم ہوجانے کی وجہ سے جسم میں آکسیجن (Oxygen)کی مقدار میں کمی واقع ہوجاتی ہے۔
۔ کارکیڈین ردھم سلیپ ویک ڈس آرڈر (Circadian rhythm sleep-wakedisorders): سونے اور جاگنے کے معمولات میں خرابی کی وجہ سے نیند کی کمی (insomnia) یا زیادتی (Hypersomnolence)کا شکار ہوجانا

۵) پیراسومنیاز (Parasomnia):

یہ ایک جامع لفظ ہے جس میں چار طرح کی بیماریاں شامل ہیں:
۔ نان ریپڈ آئی موومنٹ سلیپ اراوزل ڈس آرڈر (Non-rapid eye movement sleep arousal disorders) : اس کیفیت میں نیند میں چلنا، اور ڈرنا شامل ہے جبکہ اس انسان کواٹھنے کے بعد نیند کے دوران کی جانے والی جسمانی حرکات بالکل یاد نہیں ہوتیں۔
۔ ریسٹ لیس لیگز سنڈروم: (Restless legs syndrome) : اس کیفیت میں سوتے ہوئے ٹانگوں کی مسلسل حرکت شامل ہے جو کہ ایک نا خوشگوار احساس کا سبب بنتی ہے۔
۔ نائٹ میئر ڈس آرڈر (Nightmare Disorder): کسی ڈراؤنے خواب کے بعد جاگنا جو کہ تفصیل کے ساتھ یاد کیا جاسکے۔
۔ ریپڈ آئی موومنٹ سلیپ بہیویر ڈس آرڈر (Rapid eye movement sleep behaviour disorder): سونے کے دوران دیکھے جانے والے خواب پر اداکاری کرنا ۔

یہ مسئلہ بہت ہی عام ہے اور اسکا تجربہ نا صرف اس کے شکار افراد بلکہ ان کے اہلِ خانہ کو بھی کمزور بنادیتا ہے۔ ایک تحقیق کے مطابق، پاکستان کے شہروں میں رہنے والے ۳.۳۱فیصد نوجوان انسومنیا (insomnia) کی بیماری میں مبتلا ہیں۔ اس تکلیف کی وجہ سے ایک انسان اپنا دماغی سکون کھودیتا ہے جسکی وجہ سے روزمرہ زندگی بُری طرح اثر انداز ہوتی ہے۔ یہ کیفیت انسان کی زندگی میں کسی بھی وقت پیدا ہوسکتی ہے۔ اگر آپ اوپر بتائی ہوئی کسی بھی علامت کو محسوس کرتے ہیں تو ہم سے رابطہ کریں۔ رُو ح برو۔ آئیے بات کریں۔



!ہم سے رابطہ کریں ، روح برو - آئیں بات کریں


  تھراپی حاصل کریں  


 آگے مختلف لت کی اکسام کے بارے میں ڑھیں 

  مادی چیزوں کی لت